SongtexteDhamak

Quratulain Balouch

Letzte Aktualisierung am: 21. Juli 2017
Diese Songtexte brauchen ein Review
If you found mistakes, please help us by correcting them.

عجب غم کی دھمک دل پر پڑی ہے اداسی آئینوں سے جھانکتی ہے یہ کس منظر پہ تم نے ساتھ چھوڑا

میری تصویر آدھی رہ گئی ہے تمہارا ہاتھ ابھی تو ہاتھ پر تھا اچانک آنکھ میری کھل گئی ہے ابھی کل تک فلک تھا دسترس میں اور اب اپنی زمیں بھی اجنبی ہے عجب غم کی دھمک دل پر پڑی ہے تمہاری یاد گھبرا کر جہاں سے میرے شانے سے لگ کر سو گئی ہے تیرے ہم خواب ہونے کی تمنا میری بے خوابیوں میں جاگتی ہے عجب غم کی دھمک دل پر پڑی ہے فنا کے بعد بھی خواہش ہے تیری مسافت ہے مگر کتنی کڑی ہے کھڑے ہیں سانس کی سرحد پہ تنہا ہمارے درمیاں بس زندگی ہے عجب غم کی دھمک دل پر پڑی ہے اداسی آئینوں سے جھانکتی ہے یہ کس منظر پہ تم نے ساتھ چھوڑا میری تصویر آدھی رہ گئی ہے میری تصویر آدھی رہ گئی ہے

  • 0

Letzte Aktivitäten

Synchronisiert vonUmmer Hussain Dar
Übersetzt vonRaven Harlem

Musixmatch ist jetzt für
deinen Computer für Spotify
und iTunes verfügbar

Jetzt herunterladen